Home » Gujranwala » عدلیہ کی بحالی کے بعد پارلیمنٹ کی بالادستی سے جمہوریت اصل روح میں فروغ پائے گا ،فیصل میر

عدلیہ کی بحالی کے بعد پارلیمنٹ کی بالادستی سے جمہوریت اصل روح میں فروغ پائے گا ،فیصل میر

گجرات :پاکستان پیپلز پارٹی شیرپاؤکے فیڈرل کونسل ممبر محمد فیصل میر نے کہا ہے کہ عدلیہ کی بحالی کے بعد پارلیمنٹ کی بالادستی سے جمہوریت اصل روح میں فروغ پائے گا لہٰذا پارلیمنٹ کو بااختیار بنانے کی اشد ضرورت ہے ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے پی پی پی شیرپاؤ پارٹی تنظیم کے عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ا۔اجلاس میں پارٹی کے تنظیمی امور اور ملکی صورتحال کا جائزہ بھی لیا گیا۔ فیڈرل کونسل ممبر محمد فیصل میرنے موقف اختیار کیا کہ اگر پارلیمنٹ کو انتظامیہ کے ماتحت رکھا گیا تو پھر عدلیہ کی بحالی سے ہونے والی پیش رفت اپنی افادیت کھو جائے گا۔انھوں نے عدلیہ کی بحالی کو ایک خوش آئند اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ہمیں ملک کو درست سمت میں آگے لے جانے کیلئے ایک بہترین موقع ہاتھ آیا ہے اور اس سے ہمیں بھرپور فائدہ اٹھانا چاہیے۔انھوں نے کہا کہ اگر 1973کے آئین میں دےئے گئے پارلیمنٹ کے حقیقی اختیارات بحال کرنے کیلئے اقدامات نہ اٹھائے گئے تو پھر صرف عدلیہ کی بحالی سے قومی مسائل کا حصول ممکن نہ ہوگا۔انھوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ موجودہ صورتحال میں پارلیمنٹ اپنے حقیقی اختیارات استعمال کرنے سے قاصر ہے لہٰذا ضرورت اس امر کی ہے کہ سترویں آئینی ترمیم اور آئین کی متنازعہ شق (B) 2))58 کا خاتمہ کرکے پارلیمنٹ کا بااختیار بنایاجائے اور جمہوری اداروں کو مستحکم کیا جائے۔ انھوں نے مطالبہ کیا وفاقی اکائیوں کو صوبائی خود مختاری دی جائے کیونکہ اس سے فیڈریشن مستحکم ہوگا اور چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی کا خاتمہ ہوگا۔انھوں جنرل سیلز ٹیکس میں اضافے کو ایک ظالمانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے عوام پر مزید بوجھ بڑھے گا۔انھوں نے کہا کہ عوام پر مزید ٹیکس لگانے کی بجائے انھیں ریلیف دیا جائے ۔ پٹرول کی قمتیوں میں کمی نہ کرنا عوام کے ساتھ زیادتی ہے، عالمی منڈی میںپٹرول کی قمتیوں میں کمی کے باوجود عوامی حکومت خالی بیان بازی کے علاوہ عوام کو ریلیف نہیں دے سکی۔