Home » Business » کراچی کیس،92آپریشن کی خفیہ رپورٹ ریکارڈ میں نہیں، اے جی

کراچی کیس،92آپریشن کی خفیہ رپورٹ ریکارڈ میں نہیں، اے جی

کراچی:کراچی کی صورتحال پر سپریم کورٹ ازخود نوٹس کی سماعت چیف جسٹس افتخارمحمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جاری ہے۔ ایڈووکیٹ جنرل سندھ عبدالفتح ملک نے عدالت میں بیان دیا کہ کراچی میں1992 کے آپریشن کے بارے میں خفیفہ اداروں کی رپورٹ ریکارڈ میں موجود نہیں ہے۔ ایڈ ووکیٹ جنرل سندھ نے عدالت کو بتایا کہ ریکارڈ میں اس دور میں ہونے والے جرائم کی رپورٹ موجود ہے۔ عدالت نے 92 کے آپریشن کے بارے میں خفیہ اداروں کی رپورٹ اقبال حیدر کے نکتہ اٹھانے پر آج طلب کی تھی۔سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ جو ریکارڈ موجود ہے اس کی کاپی اقبال حیدر کو فراہم کی جائے۔ سپریم کورٹ نے کے ای ایس سی کے لیگل ایڈوائزر فہیم الکریم ایڈووکیٹ کے قتل پر متعلقہ ایس پی سے تفتیش کی رپورٹ کے لیئے کل تک کی مہلت دے دی۔جبکہ گزشتہ روز سچل کے علاقے، جے پی ایم سی کی پارکنگ اور ملیر میں پولیس اہلکار کے قتل کی رپورٹ بھی طلب کی ہے۔ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے انسداد دہشت گردی کے عدالتوں میں گزشتہ روزچھ ججوں کی تقرری کا نوٹیفیکشن عدالت میں پیش کیا۔