Home » News » افغانستان ،پاکستان پر امریکی پالیسی کے اثرات جلدمتوقع

افغانستان ،پاکستان پر امریکی پالیسی کے اثرات جلدمتوقع

واشنگٹن : امریکا نے کہا ہے کہ افغانستان اور پاکستان کیلئے امریکی پالیسی کے اثرات ایک سال میں سامنے آئیں گے ۔ واشنگٹن میں اٹلانٹک کونسل کی تقریب سے خطاب میں وائٹ ہاوٴس کی قومی سلامتی کے مشیر جنرل جیمز جونز نے کہا کہ افغانستان اور پاکستان کیلئے امریکی پالیسی کی کامیابی کے بارے میں کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔ امریکی پالیسی کی کامیابی کا اندازہ صحیح جانچ کے بعد ہی لگایا جاسکتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں کہ کیا امریکی پالیسی افغانستان اور پاکستان میں کامیاب ہورہی ہے جنرل جیمز جونز نے کہا کہ اس بارے میں فوری طور پر کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ امریکی حکمت عملی کا مقصد محض عسکری کامیابی حاصل کرنا نہیں ہے۔ دیکھنا یہ ہے کہ بیک وقت سیکورٹی، معاشی ترقی اور قانون کی حکمرانی کیسے حاصل کی جاسکتی ہے۔ کامیابی کیلئے امریکا کو تین طرفہ حکمت عملی اپنانا ہوگی۔انہوں نے سوات میں طالبان کیخلاف پاک فوج کی کارروائیوں کو سراہا اور کہاکہ پاک فوج کو عوام کی حمایت حاصل ہے۔ آپریشن کے بعد حکومت کی عوامی حمایت میں اضافہ ہوا۔ اس کا اثر پاک افغان سرحدی علاقوں پر بھی سامنے آئے گا۔ جنرل جیمز جون نے کہا کہ صدر براک اوباما کی پالیسیوں کی بدولت امریکا اور عوام محفوظ ہیں۔