Home » News » شر پسند دوبارہ مینگورہ میں داخل ہو سکتے ہیں،بریگیڈیئر طاہر حمید

شر پسند دوبارہ مینگورہ میں داخل ہو سکتے ہیں،بریگیڈیئر طاہر حمید

مینگورہ:مینگورہ فورس کے انچارج بریگیڈئیر طاہرحمید نے کہا ہے کہ شر پسند دوبارہ مینگورہ میں داخل ہو سکتے ہیں، انھیں روکنے کے لیے مقامی لوگوں کو پاک فوج اور انتظامیہ کے ساتھ تعاون کرنا ہو گا۔سرکٹ ہاوس مینگورہ میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے بریگیڈئیر طاہرحمید نے کہا کہ مینگورہ شہر کے70 فیصد علاقے پر سیکیورٹی فورسز نے کنٹرول حاصل کر لیا ہے، جبکہ باقی ماندہ تیس فیصد علاقہ بھی آئندہ تین سے چار روزمیں کلئیر کردیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ مینگورہ شہر فوج کے مکمل کنٹرول میں آنے کے بعد نقل مکانی کرنیوالے واپس اپنے گھروں کو آ سکیں گے۔ بریگیڈئیر طاہر حمید نے اس خدشے کا اظہار بھی کیا کہ شر پسند عام شہریوں کے روپ میں دوبارہ مینگورہ میں داخل ہو سکتے ہیں۔ اس لیے ان کی نشاندہی میں مقامی لوگ پاک فوج اور انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں۔ تاکہ مینگورہ میں دیرپا امن قائم ہو سکے۔ بریگیڈیئر طاہر حمید کے مطابق عسکریت پسندوں نے امن معاہدے کی دو سو مرتبہ خلاف ورزیاں کیں۔ جس پر مجبورا آپریشن کرنا پڑا۔ انھوں نے کہا کہ مینگورہ سٹی، امام ڈھیری اور ملوک آباد میں آپریشن کے دوران286 شرپسند مارے جا چکے ہیں۔ جب کہ سکیورٹی فورسز کے سات اہلکار شہید ہوئے۔ مینگورہ شہر میں آج دوسرے روز بھی سرچ آپریشن جاری ہے۔جس میں پچیس مشتبہ افراد گرفتار کیے جا چکے ہیں۔