Home » News » بھارتي آرمي چيف کي ليفٹيننٹ جنرل کيخلاف تحقيقات کي درخواست

بھارتي آرمي چيف کي ليفٹيننٹ جنرل کيخلاف تحقيقات کي درخواست

  • Publish on March 29, 2012 in News
  • |
  • by admin

نئي دہلي: بھارتي فوج کے سربراہ جنرل وي کے سنگھ کے وزير اعظم کو لکھے کے گئے خط سے اٹھنے والا شور ابھي ختم نہيں ہواتھا کہ بھارت ميں سيکيورٹي اداروں ميں خرد برد کا ايک اور اسکينڈل سامنے آگيا ہے. بھارت ميں ايک رکن اسمبلي امبيکا بنير جي نے ايک خط ميں فوج کے ايک ليفٹيننٹ جنرل دلبير سنگھ سہاگ پردفاعي سودوں ميں خرد برد کا الزم عائد کيا ہے.کور کمانڈر دلبير سنگھ آئندہ آرمي چيف بھي بن سکتے ہيں.بنير جي کے خط پر بھارت کے آرمي چيف نے سي بي آئي کو ليفٹيننٹ جنرل دلبيرسنگھ سہاگ کے خلاف تحقيقات کا حکم ديا ہے.امبيکا بنير جي نے دلبيرسنگھ پر رات ميں ديکھنے والي دوربينوں، مواصلاتي نظام اور ہتھياروں کي خريداري ميں خوردبرد کا الزام عائد کيا ہے.يہ خريداري اس وقت ہوئي تھي جب ليفٹيننٹ جنرل دلبير سنگھ اسپيشل فرنٹئر فورس ايس ايف ايف کے انسپکٹر جنرل تھے.ايس ايف ايف را کے زير انتظام ادارہ ہے.بنير جي نے اپني دخواست ميں سابق آرمي چيف سميت کچھ اور فوجي افسروں کے نام بھي شامل کئے ہيں جنہوں نے سودوں ميں کک بيک حاصل کيا ،اس کے علاوہ بنير جي نے اس ايجنٹ کا نام بھي بتايا ہے جو بقول ان کے ان سودوں ميں شامل تھا.