Home » News » بجلی کی لوشیڈنگ کے خلاف عوامی احتجا ج شدید ہوگیا

بجلی کی لوشیڈنگ کے خلاف عوامی احتجا ج شدید ہوگیا

  • Publish on March 29, 2012 in News
  • |
  • by admin

بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ سے عوام میں غصہ بڑھتا جارہا ہے جیسے جیسے گرمی بڑھتی جارہی ہے ویسے ہی احتجاج میں بھی شدت آنے لگی ہے ۔ پنجاب کے مختلف شہروں کے بعد احتجاج کا سلسلہ دیگر شہروں تک پھیلنے لگا ہے۔ بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف عوام سراپا احتجاج ہیں ۔ عوامی غیض و غضب کا نشانہ سرکاری املاک بن رہی ہیں ۔ پنجاب کے مخلتلف شہر میدان جنگ کا منظر پیش کررہے ہیں ۔لاہور کے علاقے ٹائون شپ میں لوڈشیڈنگ اور بجلی کے بلوں میں فیول ایڈجسٹمنٹ سرچارج کے خلاف عوام نے شدید احتجاج کیا ایکسئین لیسکو کے دفتر میں توڑ پھوڑ کی مشتعل افراد نے ہر شے تہس نہس کردی ۔ شہریوں کے ساٹس ایکسین لیسکو ٹاؤن شپ زاہد حسین کا کہنا تھا کہ انہیں فیول ایڈجسٹمنٹ کے خاتمے کا نوٹفکیشن تاحال نہیں ملا۔ سرگودھا میں بھی لوگوں نے شدید احتجاج کیا سیٹلائیٹ ٹاون چوک سے نوری گیٹ تک احتجاجی ریلی نکالی گئی خوشاب روڈ پر ٹائر جلے اور حکومت کے خلاف نعرے لگے۔ مظاہرین نے پلے کارڈ اور بینرز تھام رکھے تھے۔فیصل آباد بھی اندھیروں کی نذر ہے جہاں کے کارخانے بند ہیں اور عوام تو گویا احتجاج پر ہی نظر آرہے ہیں۔ لوڈشیدنگ کے خلاف دوسرے روز بھی مظاہرے ہوئے ۔ فیض آباد چوک بلاک ہوا بجلی کے ستائے عوام بطور احتجاج ڈھول بجا کر بھنگڑے ڈالے ۔ چمن میں بجلی کی بیس بیس گھنٹے طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف تاجروں نے ریلی نکالی ۔ جن کا کہنا تھاکہ غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے زندگی اجیرن کردی ہے اور کاروبار تباہ ہوگیا ہے۔