Home » Gujranwala » مستقبل کے تعلیمی منظر نامہ میں ’’دی سپرٹ سکول ‘‘ کا بنیادی کردار ہو گا بیرسٹر عثمان ابراہیم

مستقبل کے تعلیمی منظر نامہ میں ’’دی سپرٹ سکول ‘‘ کا بنیادی کردار ہو گا بیرسٹر عثمان ابراہیم

گوجرانوالہ(خصوصی رپورٹر)تعلیم انسان کی تیسری آنکھ کی حیثیت رکھتی ہے اسی لئے حکومت پنجاب نے تبدیلی بذریعہ تعلیم کو اپنا بنیادی نظریہ بنا رکھا ہے، انقلاب کھوکھلے نعروں سے نہیں بلکہ معیاری تعلیم سے ہی ممکن ہے، عام آدمی کو ایجوکیٹ کر دیا جائے تو ملک سے بھوک افلاس سمیت انتہا پسند ی اور غیر یقینی صورتحال کا خود بخود خاتمہ ہو جائے گا،مستقبل کے تعلیمی منظرنامہ میں ’’دی سپرٹ سکول‘‘ کا بنیادی کردار ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار سابق صوبائی وزیر تعلیم بیرسٹرمحمد عثمان ابراہیم ممبر قومی اسمبلی نے ’’سپیرئیر گروپ آف کالجز‘‘کے پراجیکٹ ’’دی سپرٹ سکول ‘‘ سٹیلائٹ ٹاؤن کیمپس کی افتتاحی تقریب کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر صدر بار ایسو سی ایشن گوجرانوالہ گل نواز گورائیہ، سابق ایم پی اے پیر غلام فرید، سابق ایم پی اے ایس اے حمید،ای ڈی او ایجوکیشن گوجرانوالہ ریاض احمد سوہی، کنٹری پریذیڈنٹ نیشنل ایسو سی ایشن آف پرائیویٹ سکولز ، صاحبزادہ سجاد مسعود چشتی، معروف سماجی شخصیت میاں زاہد ممتاز ایڈووکیٹ، صدر دمہ اینڈ میڈیکل ویلفیئر فورم ڈاکٹر سردار ریاض احمد، پرنسپل گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول نمبر1، مسز رخسانہ روحی، ڈپٹی ڈائریکٹر گوجرانوالہ ڈویلپمنٹ اتھارٹی ساجد مظفر، ڈی ایس پی ٹریفک غلام عباس، ڈاکٹر فرخ آفتاب، صدر گوجرانوالہ یونین آف جرنلسٹ راجہ حبیب، چیئر مین’’ روز نامہ فری پریس‘‘ عرفان کامریڈ، چیئر پرسن چاؤں فاؤنڈیشن ثمینہ عرفان، منیجنگ ڈائریکٹر دی ایجوکیٹرز کالج چودھری محمد شاہد، منیجنگ ڈائریکٹر الائیڈ سکول ماڈل ٹاؤن کیمپس چودھری محمد انور، منیجنگ ڈائریکٹر گرینز گروپ آف کالجز پروفیسر فیصل ایوب، منیجنگ ڈائریکٹر فاران گروپ آف کالجز ڈاکٹر محمد نواز سجاد، پرنسپل حافظ ماڈل ہائی سکول اینڈ گرلز کالج حافظ محمدعمران یعقوب، چیئر مین ملت سائنس کالج باغبانپورہ، چودھری عظمان رشید، چیف ایگزیکٹو کرسٹل انڈسٹری چودھری شاہد محمود، ایم ڈی ایم آر کوئیلٹ عامر شہزاد شیخ، چیئر مین علامہ احسان شہید گروپ آف سکولز اینڈ کالجز راؤ محمد ایوب، چیئر مین ہائی ایمز سکول سسٹم نعیم اعوان، چیئر مین نیشنل کیڈٹ سکول رانا محمد لطیف و دیگر کی شرکت۔ان کے علاوہ طلباء و طالبات اور والدین نے کثیر تعداد میں شرکت کی، نہایت ہی منظم طریقہ سے انعقاد پذیر تقریب میں حمد و نعت، ملی نغمے، میجک شو، ٹیبلو اور آرٹ مقابلے پیش کئے گئے جسے حاضرین نے بے حد سراہا۔’’ دی سپرٹ سکول‘‘ کے منیجنگ ڈائریکٹر معروف رڈیالوجسٹ ڈاکٹر انجم جاوید سندھو نے خطبہ استقبالیہ میں کہا کہ ’’ دی سپرٹ سکول‘‘ کو سپیرئیر گروپ آف کالجز کے وسیع تجربے اور شاندار تعلیمی معیار کا تعاون حاصل ہے، ملک بھر میں ’’ دی سپرٹ سکول‘‘ کی معیاری تعلیمی درسگاہوں کا نیٹ ورک سب کیلئے یکساں تعلیمی مواقع فراہم کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بحیثیت ایک ڈاکٹر کے مجھے شہر میں جدید سہولیات سے مزین ہسپتال بنانا چاہئے تھا مگر برادر عزیز محمد شہباز جٹ چیف ایڈیٹر روز نامہ ’’ سرپرائز نیوز‘‘ کے مشورے سے تعلیمی ادارہ بنانے کا تہیہ صرف اس لئے کر لیا کہ شعبہ تعلیم ، تعلیم یافتہ افرادکی عدم دلچسپی کے باعث ایک عرصہ سے انویسٹر کے ہاتھوں میں چلا گیا ہے اور کوئی بھی کاروبار نہ تو کبھی نظریاتی ہو سکتا ہے اور نہ ہی خدمت ،یقینایہ دکھ کی ہی بات ہے ، عصر حاضر کا تقاضا ہے کہ تعلیم یافتہ طبقہ استحکام پاکستان کی خاطر تعلیم کے فروغ کیلئے اپنا موثر اور بھرپور کردار ادا کرے، انہوں نے کہا کہ ’’ دی سپرٹ سکول‘‘ سیٹلائٹ ٹاؤن کیمپس کے قیام کا مقصد صرف اور صرف طلباء کو معیاری تعلیم کے ایسے تجربے سے روشناس کرانا ہے جو ہمارے سماجی اور ثقافتی دائرہ کار میں رہتے ہوئے اعلیٰ تعلیم اور بہترین تربیت کے ذریعے ان کی ذہنی صلاحیتوں کو اجاگر کر سکے تا کہ اس کا فائدہ نہ صرف طلباء کو بلکہ معاشرے اور ملک کو بھی پہنچے۔