Home » Gujranwala » فرائض میں غفلت اور تساہل کو ہرگز برداشت نہیں کیاجائے گا،شہباز شریف

فرائض میں غفلت اور تساہل کو ہرگز برداشت نہیں کیاجائے گا،شہباز شریف

لاہور(رانا ذوالفقارعلی)وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ امن کے بغیر معاشی و تجارتی سرگرمیوں اور سرمایہ کاری کافروغ ممکن نہیں۔ امن و امان کاقیام ،عوام کی جان و مال کا تحفظ پولیس کی ذمہ داری ہے اوراس مقصد کے لئے فورس پوری محنت اور جانفشانی سے کام کرے۔ پولیس اورتمام سکیورٹی ادارے مربوط انداز میں کام کریں، پولیس پٹرولنگ کے نظام کو مزید موثر بنایاجائے اور مشکوک افراد پر کڑی نگاہ رکھی جائے۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ تمام اداروں اور حساس مقامات کی سکیورٹی کو مزید موثر بنایاجائے اور غیر ملکیوں کے تحفظ کیلئے سکیورٹی پلان کا ازسرنو جائزہ لیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ صوبائی وزیرقانون ہفتے میں دو بار جبکہ میں خودہر ہفتے امن و امان کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کروں گا۔ وہ صوبے میں امن و امان کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔ صوبائی وزیرقانون رانا ثناء اللہ خان، مشیرجہانزیب برکی، اراکین اسمبلی میاں مرغوب احمد، کرنل (ر) شجاع خانزادہ، انسپکٹر جنرل پولیس، سیکرٹریز ہوم ،پراسیکیوشن، قانون، کمشنر وڈی سی او لاہور،ایڈیشنل آئی جی سپیشل برانچ، سی سی پی او لاہور اور متعلقہ افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس میں سانحہ رسول پارک کے مختلف پہلوؤں کا بھی جائزہ لیاگیا۔وزیراعلیٰ محمدشہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ امن و امان کا قیام اور عوام کے جان و مال کا تحفظ پنجاب حکومت کی پہلی ترجیح ہے اور اس مقصد کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جارہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ہمارے لئے ایک ایک جان قیمتی ہے اور ہر جان کی حفاظت ہماری ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان تاریخ کے مشکل ترین دور سے گزر رہاہے ،دہشت گردی اور بدامنی کی آگ نے ملک کی بنیادوں کو ہلاکررکھ دیاہے۔انہوںنے کہاکہ پوری قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں متحد اور پرعزم ہے ۔ ہم ملک کو اس لعنت سے پاک کرکے رہیں گے۔ انہوںنے کہاکہ تمام اداروں، حساس مقامات، غیرملکیوں اور دوسرے صوبوں سے یہاں آنے والے افراد کی حفاظت کیلئے مزید موثر انتظامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری مراکز میں سکیورٹی کے مقاصد کیلئے بہترین سکیورٹی کمپنیوں سے بھی رابطہ کیاجائے اور ان مقامات پر تربیت یافتہ گارڈز کی تعیناتی کا جائزہ لیا جائے ۔ انہوںنے کہاکہ مختلف چوراہوں ،سڑکوں، اہم مقامات اور اداروں میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب بھی ضروری ہے، اس حوالے سے موثر اقدامات کئے جائیں۔انہوںنے کہاکہ ایلیٹ فورس کا قیام سنگین جرائم سے نمٹنے کے لیے عمل میں لایاگیا تھا اسے پوری طرح اسی مقصد کیلئے استعمال میں لایاجائے۔ انہوں نے کہاکہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں تراویح اور دیگر نمازوں کے اوقات میں مساجد اورامام بارگاہوں میں سکیورٹی کے حوالے سے موثر انتظامات کئے جائیں ۔ انہوںنے کہاکہ ہمیں اجتماعی کاوشوں سے پنجاب کو امن کا گہوارہ بناناہے تاکہ یہاں سرمایہ کاری بڑھے اور معاشی و تجارتی سرگرمیوں کو فروغ ملے۔انہوںنے کہا کہ تمام ڈسٹرکٹ پولیس افسران اپنے اپنے اضلاع میں قیام امن اور جرائم کے خاتمے کیلئے اپنا موثر کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہاکہ پنجاب حکومت نے دہشت گردی سے موثر انداز میں نمٹنے کیلئے محکمہ انسداد ہشت گردی قائم کیا ہے اور پولیس کو بھی جدید اسلحے اور تربیت سے آراستہ کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے پیٹ کاٹ کر پولیس کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافہ کیاہے اور اب یہ پولیس کی ذمہ داری ہے کہ وہ نتائج دے۔فرائض میں غفلت اور تساہل ہرگز برداشت نہیں کیاجائے گا۔ انسپکٹر جنرل پولیس حاجی حبیب الرحمن نے قیام امن اور جرائم کے خاتمے کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔ انہوںنے بتایاکہ جرائم کی بیخ کنی کیلئے اور بغیر نمبر پلیٹ گاڑیوں کے خلاف مہم جاری ہے۔ انہوںنے بتایاکہ سانحہ رسول پارک کی تحقیقات کیلئے مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی گئی ہے جو پورے معاملے کا جائزہ لے رہی ہے۔