Home » News » لوڈ شیڈنگ کے معاملے میں امتیازی سلوک برتا جارہا ہے، چیف جسٹس لاہو رہائیکورٹ

لوڈ شیڈنگ کے معاملے میں امتیازی سلوک برتا جارہا ہے، چیف جسٹس لاہو رہائیکورٹ

  • Publish on August 8, 2012 in News
  • |
  • by admin

لاہور( این این آئی) لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیئے ہیں کہ وفاقی حکومت لوڈ شیڈنگ کے معاملے میں امتیازی سلوک برت رہی ہے، لاہور جیسے شہر میں عوام 18،18گھنٹے بجلی سے محروم رہتے ہیں،شدید گرمی میں جب بجلی ملے گی نہ پانی تو لوگ سڑکوں پر ہی نکلیں گے ۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے یہ ریمارکس اے کے ڈوگر کی طرف سے لوڈ شیڈنگ کے معاملے میں پنجاب سے امتیازی سلوک ،طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کیخلاف دائر درخواست کی سماعت کے دوران دئیے ۔چیف جسٹس نے کہا کہ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے لوگوں کا احتجاج جائزہے، اے سی والے کمروں میں بیٹھے اعلی حکام کوعوام کی تکلیف کا اندازہ نہیں۔ 2 فیصد وی وی آئی پی طبقے کو مستثنیٰ قرار دے کر کروڑوں عوام کوعذاب میں جھونک دیاگیا۔ عدالت نے قراردیاکہ واپڈا کو دوہرا معیار اپنانے کی اجازت نہیں دی جا سکتی،طویل لوڈ شیڈنگ کے ذمہ دار افراد کو بلا کر باز پرس کی جائے گی۔ عدالت نے6 ماہ کالوڈ شیڈنگ کاشیڈول اور عوام کو اس سے آگاہی بارے ریکارڈ طلب کر لیااوروفاقی حکومت سے بجلی کی پیداوار میں حائل مالی مشکلات ،بلوں کے ذریعے حاصل ہونے والی رقم کے تصرف اور انتظامی اخراجات کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے سماعت 17اگست تک ملتوی کر دی ۔