Home » Gujranwala » پولیس مظلوم کی دادرسی کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھے،وزیراعلیٰ پنجاب

پولیس مظلوم کی دادرسی کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھے،وزیراعلیٰ پنجاب

لاہور (بیورورپورٹ،میڈیاورلڈ لائن)وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پولیس مظلوم کی دادرسی کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھے۔ مظلوم کی دادرسی اور انصاف کی فراہمی سے بڑھ کر کوئی نیکی نہیں۔ پولیس کیسز کی درست تفتیش کرکے ملزموں کو کیفرکردار تک پہنچائے۔کیسز کی تفتیش کے دوران انصاف کے تقاضے ہر صورت پورے کئے جائیں۔معاشرے انصاف کی فراہمی ہی سے بنتے ہیں جبکہ ناانصافی کے باعث معاشروں میں بگاڑوانتشار پیدا ہوتاہے۔انصاف کی فراہمی کے راستے میں کوئی چیز حائل نہیں ہونی چاہئیے، انصاف کا بول بالا ہوگا تو معاشرے میں امن و سکون ہوگا۔ وہ آج یہاں ماڈل ٹاؤن میں مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے سائلین سے ملاقات کے موقع پر بات چیت کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ نے سائلین کی شکایات پران کے ازالے کے لئے پولیس حکام کو فوری احکامات جاری کئے۔ ایم این اے پرویز ملک، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب، سیکرٹریز داخلہ ، پراسیکیوشن، انسپکٹر جنرل پولیس، ڈی جی اینٹی کرپشن اور متعلقہ پولیس حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ تفتیش خراب کرنے والے پولیس افسر اور اہلکار اپنے فرائض منصبی سے انصاف نہیں کر رہے۔ پولیس کو ہر قسم کے وسائل فراہم کئے گئے ہیں اس لئے ان کی کارکردگی عوام کی توقعات کے مطابق ہونی چاہیئے۔ مظلوم کی دادرسی میں کوئی کوتاہی یا غفلت برداشت نہیں کی جائے گی۔ محمد شہباز شریف نے کہا کہ اچھی کارکردگی دکھانے والے پولیس آفیسر اور اہلکار ہمارے سر کا تاج ہیں۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ گھناؤنے جرائم کے شواہد کی تصدیق کا عمل فرانزک لیب سے جلد کرایا جائے ۔انہوںنے کہاکہ ملزم جتنا بھی بااثر ہو اس کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے اور کسی قسم کا دباؤ برداشت نہ کیاجائے۔غریب آدمی کو بے گناہ کسی کیس میں ملوث کرنے والے پولیس اہلکار کسی قسم کی رعایت کے مستحق نہیں۔ایسے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔ انہوںنے کہاکہ انصاف نظر بھی آناچاہئیے۔انہوںنے پولیس حکام کو ہدایت کی کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں جرائم کے خاتمے کے لئے متحرک او رفعال کردار ادا کریں۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ غریب آدمی کی شنوائی اس کے علاقے میں ہی ہونی چاہئیے تاکہ انصاف کے حصول کے لئے انہیں میرے پاس نہ آناپڑے۔وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے یوم عاشور پر امن و امان کی فضا برقرار رکھنے پر پولیس حکام کی شاندار کارکردگی کی تعریف کی اور انسپکٹر جنرل پولیس وسیکرٹری داخلہ پنجاب سمیت تمام پولیس افسروں اور اہلکاروں کی مثالی کارکردگی کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ یوم عاشور کے موقع پر امن وامان کی فضا برقرار رکھنے کے لئے شاندار کارکردگی دکھانے والے پولیس افسران کی حوصلہ افزائی کی جائے گی ۔ وزیراعلیٰ نے عوام،علمائے کرام، میڈیا اور زندگی سے تعلق رکھنے والے دیگر افراد کے کردار کو سراہا اور کہاکہ مشکلات کے باوجودہر ایک نے مثالی کارکردگی کا مظاہرہ کیاہے جس پر میں سب کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ وزیراعلیٰ نے تھانہ رائے ونڈ میں 92 کلو گرام ہیروئن کیس میں ملوث پولیس ملازمین کو 7 روز میں گرفتار کرنے کے احکامات جاری کئے جبکہ لوئر مال تھانہ میں منشیات کا جھوٹا مقدمہ درج کرکے غریب شہری کو مقدمے میں ملوث کرنے والے انسپکٹر کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ نے شفیق آباد میں اغواء برائے تاوان کے کیس میں ملزموں کی گرفتاری پر ایس پی سٹی اور ڈی ایس پی شفیق آباد کو شاباش دی۔ انہوں نے ڈی ایس پی شفیق آباد کیلئے نقد انعام اور تعریفی سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیا۔ مصری شاہ میں شاہنواز بٹ کے بیٹے کے قتل کے ملزمان کی گرفتاری پر ڈی ایس پی کیلئے نقد انعام اور تعریفی سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیاگیا۔ وزیراعلیٰ نے پولیس حکام کو ہدایت کی کہ اٹک میں قتل کیس کے مدعیوں کو مکمل تحفظ فراہم کیا جائے۔قصور میں عذرا بی بی کے خاندان کے دو افراد کے قتل کیس کے حوالے سے بتایاگیا کہ دو ملزم گرفتار کئے جاچکے ہیں۔ مدعی خاندان نے وزیراعلیٰ سے مالی امداد اوربچوں کے علاج معالجے کی اپیل کی جس پر وزیراعلیٰ نے مالی امداد اور فری علاج معالجے کی سہولت فراہم کرنے کا حکم دیا۔سائلین نے ملاقات کے دوران اپنی شکایات کے فوری ازالے پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔