Home » Gujranwala » لاہور جلسہ میں طاہر القادری قوم کو کوئی قابل ذکر لائحہ عمل نہیں دے سکے ، اشرف آصف جلالی

لاہور جلسہ میں طاہر القادری قوم کو کوئی قابل ذکر لائحہ عمل نہیں دے سکے ، اشرف آصف جلالی

گو جرانوالہ ( سٹاف رپورٹر)بانی ادارہ صراط مستقیم انٹرنیشنل ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے محمد طاہر القادری کے مینار پاکستان کے جلسے کے بارے میں شدید ردّعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے عوام کو نظام کی اصلاح کا چکمہ دے کر کوئے سیاست کی طرف اپنی واپسی کیلئے رستہ ہموار کیا افسوس کہ وہ قوم کو کوئی قابل ذکر لائحہ عمل نہیں دے سکے ۔ قوم کے نہ جانے کس کس کے اربوں روپے خرچ کر دئیے ۔ وہ ایسے ڈاکٹر ہیں جو مہنگی فیس وصول کر کے قوم کے مرض کی تشخیص نہیں کر پائے اور سستی دوائی مہنگے داموں فروخت کرنے کیلئے مہینوں ڈھنڈورا پیٹتے رہے۔ ان کی تقریر تضادات کا مجموعہ تھی جس میں کافی حد تک جھوٹ کی امیزش بھی تھی ۔ اربوں روپے کی تشہیر اور ہر قسم کی لادینی قوتوں سے اتحاد کے باوجود وہ مینار پاکستان پر اتنا بڑا جلسہ نہیں کر پائے جتنا ان کا دعوی تھا اور جتنی ان کی تشہیر تھی ۔انہوں نے مغرب کی اسلام دشمنی قرآن جلانے کے واقعات اور گستاخانہ فلم کے بارے میں مغرب کی مذمت نہ کر کے اپنے بارے میں قائم کی جانے والی اس رائے کو تقویت دی ہے کہ وہ امپورٹڈ ایجنڈے پہ چل رہے ہیں ۔اپنے سمیت لاکھوں لوگوں کی نماز ضائع کر کے انہوں میں تاریخ کے بڑے جرم کا ارتکاب کیا ۔اس دن نماز عصر کا ٹائم ۳ بج کر ۲۸ منٹ پر شروع ہورہا تھا جبکہ وہ ۳ تین بج کر پانچ منٹ پر تقریر شروع کر چکے تھے جو انہوں نے غروب آفتا ب کے بعد جا کر ختم کی تو یہ جلسہ نظام بدلو کی بجائے نماز بدلو بن گیا ۔جلسہ میںمیوزک اور بے پردہ نوجوان لڑکیوں کی استقبالی کیمپوں پر سرگرمیاں ان کے انقلاب کوپہچاننے کے لئے کا فی ہے ۔