Home » Business » آٹا ملوں کے خلاف پیر سے کارروائی کرنے کا فیصلہ

آٹا ملوں کے خلاف پیر سے کارروائی کرنے کا فیصلہ

سندھ حکومت نے مقرر کردہ نرخ پر آٹا فروخت نہ کرنے والی ملوں کے خلاف پیر سے کارروائی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔ گزشتہ پندرہ روز میں آٹے کی قیمت میں چار روپے فی کلو کا اضافہ ہوا ہے۔ صوبائی محکمہ خوراک کے ترجمان نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ بتیس روپے فی کلو گرام آٹا فروخت نہ کرنے والی ملوں کا کوٹا منسوخ کرکے مل بند کردی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک کی ٹیمیں پیر سے چھاپہ مار مہم کا آغاز کرینگیٴ۔ دوسری جانب آل کراچی گروسرز ایسوسیئشن کے چیرمین انیس مجید کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت کی جانب سے فلور ملز کو گندم کی فراہمی میں کمی کی وجہ سے آٹے کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلور ملز کو یومیہ تیس گندم کی بوریا مل رہی ہیں جبکہ اُن کی طلب سو بوریوں کے قریب ہے۔انیس مجید کا کہنا ہے کہ اوپن مارکیٹ سے گندم خریدنے کی وجہ فلور ملز آٹا مہنگا بیچ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو اپنے سات لاکھ ٹن گندم کے اسٹاک سے فراہمی بہتر کرنی چاہیے۔انیس مجید نے یہ بھی کہا کہ کچھ فلور ملز حکومتی کوٹے پر ملنے والی گندم سے آٹا بنانے کے بجائے دیگر مہنگی اشیاء بنا کر مارکیٹ میں فروخت کر رہیں ہیں۔گزشتہ پندرہ روز میں آٹے کی فی کلو قیمت ریٹیل مارکیٹ میں چار روپے اضافے کے بعد چالیس روپے فی کلو سے تجاوز کرگئی ہے۔