Home » Article » اسلام امن وآشتی کا درس دیتاہے۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ تحریر:غلام عباس

اسلام امن وآشتی کا درس دیتاہے۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ تحریر:غلام عباس

فخر دوجہاں حضرت محمد ﷺ نے فرمایا کہ حسین ؑ مجھ سے ہے اور میں حسین ؑ سے ہوں۔ ایک جگہ فرمایا حسن وحسین ؑ جوانان جنت کے سردار ہیں۔ رسول کریم ﷺ اور حسنین کریمین علیہم السلام نے ہمیشہ صلہ رحمی اورامن وامان کا عملی مظاہرہ کیا۔ حضرت محمد مصطفی ﷺ کے خطوط اس امر کی غمازی کرتے ہیںکہ آپ ﷺ نے ہمیشہ امن وآشتی کادرس دیاہے۔ صلح حدیبیہ اور فتح مکہ پر بھی ایک نظر ڈال لی جائے۔
نجاشی کے نام خط۔
شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والاہے۔ اللہ کے سچے رسول محمد ﷺ کی طرف سے نجاشی بادشاہ حبشہ کے نام، تم پر سلام ہو میں تمہارے سامنے اللہ کی تعریف کرتا ہوں جس کے سوا کوئی معبود نہیں۔ پاک ہے امن و سلامتی کاسرچشمہ ہے، امن عطا فرمانے والا اور انصاف کرنے والاہے۔ میں تمہیں اس خدائے وحدہ لاشریک کی طرف بلاتا ہوں جس کا کوئی شریک نہیں۔ میں تمہیں اپنی اتباع کی طرف بلاتا ہوں اس پیغام پر ایمان لاؤ جو میں لے کر آیاہوں۔ میں اللہ کا رسول ﷺ ہوں۔ میں تمہیں اور تمہارے ساتھیو ںکو اللہ کی طرف بلاتا ہوں۔ مجھ پر نازل ہونے والی کتاب پر ایمان لاؤ میں نے تمہیں پیغام حق پہنچا دیاہے۔ میری نصیحت مان لو جو سیدھی راہ پر چلے گا امن وسلامتی میں رہے گا۔ میں نے تمہارے پاس اپنے چچا زاد جعفرؓ کو بھیجاہے سلام اس پر جو ہدایت پر ہے۔نجاشی کے دربار میں جب حضور اکرم ﷺ کا خط پڑھا گیا تو وہ اس کے احترام میں تخت سے نیچے اتر آیا۔ خط کو آنکھوں سے لگایا۔ اللہ کی وحدانیت اور حضور اکرم ﷺ کی رسالت کی گواہی دی ۔ حضرت جعفرؓ کے ہاتھٖ پر اسلام کی بعیت کی اور اس خط کا جواب بھی روانہ کیا۔ اس کے علاوہ نجاشیؓ نے حضور اکرم ﷺ کی خدمت میں تحائف بھی بھیجے۔قیصر روم ہرقل کے نام ۔شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والاہے ۔یہ خط محمد رسول اللہ ﷺ کی طرف سے جانب روم کے حکمران ہرقل کی طرف بھیجا جارہا ہے۔ سلام ہو اس شخص پر جو راہ ہدایت اختیار کرے۔ میں تمہیں اسلام کی دعوت دیتا ہوں، مسلمان ہوجاؤ، محفوظ رہو گے، نیزاللہ تعالی تمہیں دوہرا اجر عطا فرمائیں گے۔ ارشاد باری تعالی ہے،، اے اہل کتاب آجاؤ اس بات کی طرف جو ہمارے اور تمہارے درمیان مسلمہ ہے کہ ہم اللہ کے سوا کسی کی عبادت نہ کریں اور اس کے ساتھ کسی کوشریک نہ ٹھہرائیںاور اپنے میں سے کسی کو اللہ کے سوا رب نہ بنائیں۔ اگر اہل کتاب نہ مانیںتو اے مسلمانو تم اعلان کرو کہ سب لوگ گواہ ہوجائیںکہ ہم بہرحال مسلمان ہیں۔(آل عمران)ہرقل نے سفیر نبوت حضرت دحیہ ؓسے کہا ،، اللہ کی قسم میں یقیناً جانتا ہوں کہ تمہارے رسول اللہ کی طرف سے مقرر کردہ نبی ہیں۔ یقیناً آپ ﷺ ہی وہ نبی ہیں جن کا ہم انتظار کررہے تھے اور آپ ﷺ ہی کا ذکر ہم اپنی کتابوں میں پاتے ہیں۔ شاہ مقوقس کے نام نامہ مبارک شرع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والاہے۔ یہ خط محمد رسول اللہ ﷺ کی طرف سے مصر کے حکمران مقوقس کو لکھا جارہا ہے ۔ سلام ہو اس شخص پر جس نے راہ ہدایت اختیار کی۔ میں تمہیں اسلام کی دعوت دیتاہوں۔ مسلمان ہوجاؤ محفوظ رہو گے۔ مسلمان ہوجاؤ اللہ تعالی تمہیں دوہرا اجر عطا فرمائے گا۔ ارشاد باری تعالی ہے۔ ،، اے اہل کتاب آ جاؤ اس بات کی طرف جو ہمارے اور تمہارے درمیان مسلمہ ہے کہ ہم اللہ کے سوا کسی کی عبادت نہ کریں اور اس کے ساتھ کسی کو شریک نہ ٹھہرائیں اور اپنے میں سے کسی کواللہ کے سو ا رب نہ بنائیں۔ اگر اہل کتاب نہ مانیںتو اے مسلمانو تم اعلان کرو کہ سب لوگ گواہ ہو جائیںکہ ہم مسلمان ہیں( آل عمران) شاہ مقوقس نے سفیر نبوت حضرت حاطب ؓکی پوری تعظیم کی اور رحضور اکرم ﷺ کو جوابی خط بھی لکھا اور تحائف بھی دئیے۔ کسری پرویز کی طرف خط شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والاہے۔ یہ خط محمد رسول اللہ ﷺ کی طرف سے جانب فارس کے حکمران کسری کو لکھا جارہاہے۔ سلام ہو اس شخص پر جو راہ ہدایت اختیار کرلے۔ اللہ تعالی اور اس کے رسول پر ایمان لائے اور گواہی د ے کہ ایک اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں ، کوئی اس کاشریک نہیںاور حضرت محمد ﷺ اس کے بندے اور رسول ہیں۔ میں آپ کواللہ تعالی کی دعوت دیتاہوں بے شک میں اللہ تعالی کا رسول ہوں۔ مجھے سب لوگوں کی طرف رسول بنا کر بھیجا گیاہے۔ شاہ دمشق کے نام خط کا متن شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والاہے۔ جو ہدایت کی پیروی کرے اور اللہ پر ایمان لائے اس پر سلام ہو، میں تجھے اللہ جس کا کوئی شریک نہیں پر ایمان لانے کی دعوت دیتا ہوں۔ شاہ مدینہ نے چند خطوط عرب کے رئیسوں کو بھی لکھے اور اسلام کا پیغام امن پہنچایا۔آخر پر ایک خوبصورت شعر
جب کبھی ضمیر کاسودا ہو دوستو