Home » Article » گوجرانوالہ: تحریک انصاف کا مستقبل.؟۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ تحریر:مشتاق احمد شیخ

گوجرانوالہ: تحریک انصاف کا مستقبل.؟۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ تحریر:مشتاق احمد شیخ

پاکستان تحریک انصاف پاکستان مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی کے بعد دیگر سیاسی جماعتوں میں اپنا بھر پور قد کاٹھ رکھتی ہے ، جسکی وجہ پارٹی چےئرمین عمران خان کی بے باکی اور صاف گوئی اور عوام دوستی ہے ، عمران خان کی قائدانہ صلاحیتوں کا آج ہر پاکستانی منعرف ہے اور ان سے کسی نہ کسی حوالے سے محبت کا اظہار کرتا ے گوجرانوالہ جو پیپلز پارٹی کا گڑھ تھامگر آج مسلم لیگ ن کا قلعہ بن کرا بھرا ہے اور یہاں کے غیور عوام نے اپنی امیدوں کا سارا وزن مسلم لیگ ن کے پلڑے میں ڈال کر اُنہیں اقتدار کے ایوانوں میں پہنچا کر اپنا حق ادا کر دیا ، مگر صاحبان اقتدار و اختیار اپنا حق ادا نہ کر سکے ، شہر کی خستہ حالی جوں کی توں رہی صفائی کے تمام دعوے دھرے کے دھرے رہے ، تعلیم و صحت کا فقدان تھا اور فقدان ہی رہا ، گوجرانوالہ بچاؤ تحریک ، گوجرانوالہ بناؤ تحریک کے کنوینئر بھی شہر کو نہ بنا سکے ، اور یہی وہ ایشوز ہیں جن کو کیش کروا کر تحریک انصاف گوجرانوالہ میں اپنا سیاسی قد بڑھا اور اپنی آواز لوگوں تک پہنچا سکتی ہے ، مگر یہاں کے سیاسی اکا برین عوامی رابطہ کی بجائے آپس کی چیرہ دستیوں میں مصروف ہیں ، کبھی ضلع وسٹی کے معاملات کے بکھیڑے تو کبھی ٹاؤنز کی تقسیم پر دست و گریباں اور اب ایک مرتبہ بھر آرگنائزنگ کمیٹیوں کے قیام کی داغ بیل ڈالکر آئندہ الیکشن میں فتح کے خواب دیکھنا شروع کر دےئے گئے ہیں جو کہ صرف خام خیالی ہی ہے ، کیوکہ کمیٹیوں کے آرگنائزر وہی لوگ ہیں جو پہلے ضلع و سٹی اور ٹاؤن کی سطح پر کام کر چکے ہیں ، اور ان کے کام اور کارکردگی ان ذات کے سوا دوسرا کوئی نہیں جانتا اور دعویٰ کیا جا رہا ہے آئندہ بلدیاتی و قومی صوبائی انتخابات میں کامیابی کا میں نے مضمون لکھنے سے قبل کئی لوگوں سے ملاقات کی اور ان سے عمران خان کی شخصیت کا پوچھا تو کسی ایک نے نہ اس کی شخصیت کردار انگلی نہ اٹھائی بلکہ تعریف کرتے ہوئے اُسے محب وطن اور نڈر لیڈر قرار دیا ، اس سروے کی روشنی میں ہیں یہ نتیجہ اخذکر سکا گوجرانوالہ کے غیور شہری غیر تمند لیڈر کو نہ صرف پسند کرتے ہیں بلکہ اُسکا ساتھ دینے کے لیے بھی تیارہیں ، صرف اسکے پیغام اور منشور کو ان تک پہنچانے کی ضرورت ہے اور اس سلسلہ میں تحریک انصاف گوجرانوالہ کی قیادت تقریباً نا پلید ہے ۔