Home » Business » بی ٹی کاٹن کی کاشت سے90ارب سالانہ بچت ہو سکتی ہے،احسان الحق

بی ٹی کاٹن کی کاشت سے90ارب سالانہ بچت ہو سکتی ہے،احسان الحق

کراچی;اگر حکومت بی ٹی کاٹن کا کاشت کی باضابطہ اجازت دے دے تو پاکستان کو سالانہ 90 ارب روپے کی بچت بھی ہوگی اور کپاس درآمد بھی نہیں کرنی پڑے گی۔پاکستان کاٹن گنرز ایسوسی ایشن کے ایگزیکٹیو ممبر احسان الحق نے جیو نیوز سے اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کپاس کی فی ایکڑ کاشت میں100فیصد کا اضافہ صرف اسی لیے ہوا کہ وہاں بی ٹی کپاس کاشت کی گئی۔ گزشتہ سال پاکستان میں وزارت خوراک و زراعت کی جانب سے بی ٹی کپاس کی کاشت کی اجازت تو دی گئی مگر یہ باضابطہ اجازت نہیں تھی اور اب اس پر دوبارہ پابندی لگا دی گئی ہے، اگر یہی حال رہا تو پاکستان میں کپاس کی فی ایکڑ پیداوار میں مزید کمی ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سال ملک میں30لاکھ بیلز سے زائد کپاس درآمد کرنی ہوگی اور اگر اگلے سال سے اگر حکومت بی ٹی کپاس کی کاشت کی اجازت دیتی ہے تو نہ صرف پاکستان کپاس میں خود کفیل ہو جائے گا بلکہ90سے95ارب روپے کی بچت بھی ہو پائے گی۔